اکتوبر 02, 2022

تازه ترین

فتوحات، اعلی حکام سمیت 83 ہلاک، 26 گرفتار، کافی غنائم

فتوحات، اعلی حکام سمیت 83 ہلاک، 26 گرفتار، کافی غنائم

امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے کابل انتطامیہ کے اعلی حکام اور مراکز پر پکتیا، تخار، میدان، کاپیسا، جوزجان، بغلان اور کابل صوبوں میں حملہ کیا،جبکہ جوزجان میں 11 اہلکار مخالفت سے دستبردار ہوئے۔
تفصیل کے مطابق
پکتیا
صوبہ پکتیا کے صدر مقام گردیز شہر کے فقیر خاک کے علاقے میں فوجی کیمپ پر مجاہدین نے منگل اور بدھ کی درمیانی شب حملہ کرکے اس پر اللہ تعالی کی نصرت سے قبضہ کرلیا۔ وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 12 ہلاک، 22 گرفتار ہونے کے علاوہ 4 فوجی ٹینک اور کافی مقدار میں ہلکے و بھاری ہتھیار مجاہدین نے تحویل میں لے لیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
تخار
صوبہ تخار کے صدر مقام طالقان شہر کے بلاک اورتہ بوز کے علاقے میں مجاہدین نےمنگل اور بدھ کی درمیانی شب فوجی ٹینک کو نشانہ بنا کر تباہ کردیا اور اس سوار ضلع بہارک پولیس چیف کمانڈر نورمحمد سمیت 6 اہلکار ہلاک ہوئے۔
دوسری جانب پیر اور منگل کی درمیانی شب مجاہدین نے طالقان شہر کے شمال میں دشمن کے خلاف وسیع کاروائی کا آغاز کیا،جس کے نتیجے میں اللہ تعالی کی نصرت سے وسیع علاقے فتح ہونے کے علاوہ 47 اہلکار ہلاک و زخمی ہونے کے علاوہ 4 فوجی ٹینک تباہ، دو ٹینک اور کافی مقدار میں ہلکے و بھاری ہتھیار مجاہدین نے تحویل میں لے لیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔
میدان
صوبہ میدان کے صدر مقام میدان شہرکے نرخ دوسر کے علاقے خاک پوشی نامی چوکی پر مجاہدین نے حملہ کرکے اس پر قبضہ کرلیا۔ وہاں تعینات اہلکاروں میں سے 5 ہلاک، 4 گرفتار، دو فوجی ٹینک اور کافی مقدار میں اسلحہ بھی برآمد کرلیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کاپیسا
صوبہ کاپیسا ضلع نجرآب کے مرکز، پولیس ہیڈکوارٹر اور تمام سرکاری سول و فوجی تنصیبات پر مجاہدین نے منگل کےروز مغرب کے وقت دوبارہ قبضہ کرلیا۔ جس کے نتیجے میں متعدد اہلکار ہلاک و زخمی ہوئے اور مجاہدین فراری اہلکاروں کا پیچھا کررہا ہے۔اس کے علاوہ کافی مقدار میں اسلحہ وغیرہ بھی مجاہدین نے تحویل میں لے لیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جوزجان
صوبہ جوزجان کے صدر مقام شبرغان شہر پر مجاہدین نے پیر اور منگل کی درمیانی شب چار اطراف سے حملہ کیا، جس کے نتیجے میں غورہ، کہلک، صوفی قلعہ، خاتون قلعہ، آلتی خوجہ، بہاوالدین اور قرہ دریا فتح ہونے کے علاوہ 13 اہلکار ہلاک، 15 زخمی ہونے کے علاوہ مجاہدین نے کافی مقدار میں ہلکے وبھاری ہتھیار وغیرہ بھی تحویل میں لے لیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
بغلان
صوبہ بغلان ضلع اندرآب کے شاشان کے علاقے میں مجاہدین نے شاہراہ کمانڈر غنی شاہ محمود کو 7 اہلکاروں سمیت قتل کردیا اور مجاہدین نے دو فوجی ٹینک ، اسلحہ وغیرہ بھی قبضے میں لیا۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
کابل
کابل شہر کے خوشحال خان کے علاقے میں مجاہدین نے منگل کے روز شام کے وقت صوبہ میدان ضلع سیدآباد کے نام نہاد ضلعی سربراہ امیر محمد ملک زوئے کو قتل کردیا ،جبکہ صبح کے وقت ضلع سروبی کے وزبین کے علاقے میں مجاہدین کے حملے میں 2 فوجی ہلاک ہوئے۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دعوت
کمیشن برائے دعوت و ارشاد امارت اسلامیہ کے عہدیداروں کی جدوجہد کے سلسلے میں صوبہ جوزجان کے صدر مقام شبرغان شہر میں کابل انتظامیہ کے 11 سیکورٹی اہلکاروں نے حقائق کا ادراک کرتے ہوئے مخالفت سے دستبرداری کا اعلان کیا۔

Related posts