کابل

گوانتانامو سے رہا ہونے والے 2 افغان شہری 22 برس برس بعد وطن واپس پہنچ گئے

گوانتانامو سے رہا ہونے والے 2 افغان شہری 22 برس برس بعد وطن واپس پہنچ گئے

 

کابل( بی این اے ) گوانتانامو سے رہا ہونے والے 2 افغان شہری 22 برس برس بعد وطن واپس پہنچ گئے ہیں۔ یہ دونوں افغان شہری جو کئی برسوں سے امریکی جیل میں قید تھے امارت اسلامیہ کی مسلسل کوششوں کے بعد رہا ہو کر آج اپنے ملک واپس پہنچ گئے۔

کابل کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر ان کی آمد پر امارت اسلامیہ کے متعدد عہدیداروں کی جانب سے ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔

رہائی پانے والے ملا عبدالظاہر صابر صوبہ لوگر کے مرکز پل علم شہر کے گاؤں حصارک سے تعلق رکھتے ہیں۔

ملا عبدالظاہر صابر کو گوانتانامو میں 17 سال جیل میں گزارنے کے بعد 2017ء میں عمان منتقل کیا گیا تھا۔

ملک واپس پہنچنے والے دوسرا شخص عبدالکریم ہے اور وہ صوبہ خوست کے ضلع تنیو کے گاؤں وزنیان کا رہائشی ہے۔

اسے حکومت پاکستان نے 2002ء میں گرفتار کیا تھا اور چند ماہ بعد اسے امریکی افواج کے حوالے کر دیا تھا۔ 14 سال بدنام زمانہ گوانتانامو جیل میں گزارنے کے بعد انہیں بھی بعد میں عمان منتقل کر دیا گیا تھا۔

2017ء سے دونوں افغان شہری عمان حکومت کی کڑی نگرانی میں اور بغیر سفری اجازت کے وہاں مقیم تھے۔

یاد رہے کہ اس سے قبل بھی امارت اسلامیہ کی کوششوں سے حاجی بشر نورزئی نامی ایک اور افغان گوانتانامو سے رہا ہوکر وطن پہنچ گیا تھا۔